Bharat Express

Nitish Kumar

نتیش کمار نے کہا، ’’2005 سے پہلے آپ شام کو گھر سے باہر نہیں نکلتے تھے۔ 2005 سے پہلے بہار کی حالت اچھی نہیں تھی، آج آپ بے فکر گھوم رہے ہیں۔

گزشتہ لوک سبھا انتخابات 2019 میں این ڈی اے کو بڑی جیت ملی تھی۔ پچھلے انتخابات میں جے ڈی یو اور بی جے پی نے 17-17 سیٹوں پر مقابلہ کیا تھا اور ایل جے پی نے چھ سیٹوں پر الیکشن لڑا تھا۔

2019 کے لوک سبھا انتخابات میں این ڈی اے نے کل 40 میں سے 39 سیٹیں جیتی تھیں۔ بی جے پی اور جے ڈی یو نے 17-17 سیٹوں پر الیکشن لڑا تھا۔ جبکہ ایل جے پی نے 6 سیٹوں پر الیکشن لڑا تھا۔

نتیش مشرا کا تعلق برہمن ذات سے ہے اور وہ 2005 سے مدھوبنی ضلع کے جھنجھارپور اسمبلی سے مسلسل جیت رہے ہیں۔ 2015 میں وہ بی جے پی میں شامل ہوئے۔

بہاراین ڈی اے اتحادیوں کے درمیان سیٹ شیئرنگ کا فارمولہ تقریباً طے ہوگیا ہے۔ بی جے پی 17 سیٹوں پر الیکشن لڑسکتی ہے۔ وہیں چراغ پاسوان گروپ کو پانچ سیٹیں ملی ہیں۔ جے ڈی یو 15 یا 16 سیٹوں پرلڑسکتی ہے۔

پشوپتی پارس، جنہوں نے 2021 میں بھتیجے چراغ پاسوان کے ساتھ بغاوت کرکے ایل جے پی کو توڑ دیا تھا، اب وہ ہریانہ میں دشینت چوٹالہ کے ساتھ بی جے پی کے چھوڑے ہوئے اتحادیوں کی صف میں شامل ہو گئے ہیں۔

بہار کے نائب وزیر اعلیٰ وجے کمار سنہا نے کہا کہ ’’جمہوریت کا احترام کیا جائے گا، جمہوریت کی حفاظت کی جائے گی اور جمہوریت کو داغدار کرنے والوں کو شرمندہ کیا جائے گا۔‘‘

بہار اسمبلی کے اسپیکر اودھ بہاری چودھری نے بدھ کو اپنی ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے واضح کیا کہ وہ 12 فروری کو بجٹ اجلاس شروع ہونے سے پہلے اپنے عہدے سے استعفیٰ نہیں دیں گے۔

بہار اسمبلی میں آج فلور ٹیسٹ ہونے والا ہے۔ نتیش کمار کو اپنی حکومت بچانے کے لیے 122 ایم ایل اے کی حمایت درکار ہے۔ تاہم انہوں نے گورنر کے سامنے 128 ایم ایل ایز کی حمایت کا دعویٰ کیا ہے۔ لیکن پچھلے کچھ دنوں میں یہ خدشہ ہے کہ جے ڈی یو اور بی جے پی کے کچھ ایم ایل اے بغاوت کر سکتے ہیں۔

بہار میں فلور ٹیسٹ سے پہلے گورنر راجندر ارلیکر نے اپنا قانونی مشیر تبدیل کر دیا ہے۔ اس دوران آر جے ڈی اور بی جے پی کے لیڈروں کے درمیان جم کر بحث ہوئی ۔