Bharat Express

SBI

آر بی آئی کے نوٹیفکیشن کے مطابق، بینک دونوں دنوں میں معمول کا کاروبار کریں گے اور عام اوقات کے مطابق کھلیں گے۔

SBI صارفین کی تعداد کے لحاظ سے ہندوستان کا سب سے بڑا بینک ہے۔ کروڑوں لوگ اپنے بینکنگ لین دین کے لیے SBI کی خدمات پر انحصار کرتے ہیں۔ بینک نے آج 23 مارچ کو پہلے ہی ایک نوٹیفکیشن جاری کر دیا تھا، جس میں خدمات میں خلل کے بارے میں آگاہ کیا گیا تھا۔

کوئمبٹور کی لاٹری کمپنی، جو الیکٹورل بانڈز کی سب سے بڑی خریدار بن کر ابھری ہے، فیوچر گیمنگ اینڈ ہوٹل سروسز پرائیویٹ لمیٹڈ ہے۔ یہ کمپنی سینٹیاگو مارٹن کی ہے جو لاٹری کنگ کے نام سے مشہور ہے۔

ایس بی آئی نے سپریم کورٹ میں اپنے حلف نامہ میں کہا، "سیاسی جماعتوں کے مکمل بینک اکاؤنٹ نمبر اور کے وائی سی کی معلومات کو عام نہیں کیا جا رہا ہے

سپریم کورٹ نے کہا کہ ایس بی آئی کے چیئرمین کو 21 مارچ کی شام 5 بجے تک ایک حلف نامہ داخل کرنا ہوگا۔ جس میں یہ دکھایا جائے کہ بینک نے انتخابی بانڈز کی تمام تفصیلات کا انکشاف کیا ہے۔

چیف جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ کی صدارت والی آئینی بنچ میں پیر کو ہوئی سماعت کے دوران کئی اشتعال انگیز دلائل کا تبادلہ ہوا

سماعت کے دوران سی جے آئی نے کہا کہ ہم نے ایس بی آئی سے انتخابی بانڈز سے متعلق معلومات دینے کو کہا تھا۔ لیکن SBI نے الیکٹورل بانڈ نمبر کے بارے میں معلومات نہیں دی ہے۔ سپریم کورٹ نے اس پہلو پر ایس بی آئی کو نوٹس جاری کیا ہے۔

ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے اویسی نے کہا، "بی جے پی ، ٹی ایم سی، کانگریس، بی آر ایس، ڈی ایم کے، بی جے ڈی، ایس پی، وائی ایس آر، شیو سینا، تقریباً تمام پارٹیوں نے انتخابی بانڈز کے ذریعے چندہ لیا

سپریم کورٹ نے جمعہ کے روز ہوئی سماعت کے دوران ایس بی آئی کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب مانگا ہے۔ معاملے کی آئندہ سماعت اب 18 مارچ کو ہوگی۔

سپریم کورٹ نے ایس بی آئی کو 12 مارچ تک انتخابی بانڈز کی خریداری سے متعلق معلومات فراہم کرنے کی ہدایت دی تھی۔ عدالت نے الیکشن کمیشن کو 15 مارچ کی شام 5 بجے تک یہ معلومات اپنی ویب سائٹ پر عام کرنے کی بھی ہدایت کی تھی۔